قرآنِ کریم (قرآن مجید) کا اردو ترجمہ بمعہ عربی متن

از مولانا محمد علی

Urdu Translation of the Holy Quran

by Maulana Muhammad Ali

Surah 8: Al-Anfal (Revealed at Madinah: 10 sections, 75 verses)

(8) سُوۡرَۃُ الۡاَنۡفَالِ مَدَنِیَّۃٌ

بِسۡمِ اللّٰہِ الرَّحۡمٰنِ الرَّحِیۡمِ

اللہ بے انتہا رحم والے ، بار بار رحم کرنے والےکے نام سے

رکوع  1

یَسۡـَٔلُوۡنَکَ عَنِ الۡاَنۡفَالِ ؕ قُلِ الۡاَنۡفَالُ لِلّٰہِ وَ الرَّسُوۡلِ ۚ فَاتَّقُوا اللّٰہَ وَ اَصۡلِحُوۡا ذَاتَ بَیۡنِکُمۡ ۪ وَ اَطِیۡعُوا اللّٰہَ وَ رَسُوۡلَہٗۤ  اِنۡ   کُنۡتُمۡ  مُّؤۡمِنِیۡنَ ﴿۱﴾

۱۔ تجھ سے مالِ غنیمت کے متعلق سوال کرتے ہیں۔ کہہ، مالِ غنیمت اللہ اور رسول کا ہے سو اللہ کا تقویٰ کرو اور اپنے اندر کے معاملات کو سنوارو اور اللہ اور اس کے رسول کی فرمانبرداری کرو اگر تم مومن ہو۔

اِنَّمَا الۡمُؤۡمِنُوۡنَ الَّذِیۡنَ اِذَا ذُکِرَ اللّٰہُ وَجِلَتۡ قُلُوۡبُہُمۡ وَ اِذَا تُلِیَتۡ عَلَیۡہِمۡ اٰیٰتُہٗ زَادَتۡہُمۡ  اِیۡمَانًا وَّ عَلٰی رَبِّہِمۡ یَتَوَکَّلُوۡنَ ۚ﴿ۖ۲﴾

۲۔ مومن وہی ہیں کہ جب اللہ کا ذکر کیا جائے تو ان کے دِل ڈر جاتے ہیں اور جب ان پر اس کی آیتیں پڑھی  جائیں وہ اُن کو ایما ن میں بڑھاتی ہیں اور وہ اپنے رب پر بھروسہ رکھتے ہیں۔

الَّذِیۡنَ یُقِیۡمُوۡنَ الصَّلٰوۃَ وَ مِمَّا رَزَقۡنٰہُمۡ  یُنۡفِقُوۡنَ ؕ﴿۳﴾

۳۔ جو نماز کو قائم کرتے ہیں اور اُس سے جو ہم نے ان کو دیا ہے خرچ کرتے ہیں۔

اُولٰٓئِکَ ہُمُ الۡمُؤۡمِنُوۡنَ حَقًّا ؕ لَہُمۡ دَرَجٰتٌ عِنۡدَ رَبِّہِمۡ وَ مَغۡفِرَۃٌ وَّ رِزۡقٌ کَرِیۡمٌ ۚ﴿۴﴾

۴۔ یہی سچے مومن ہیں ان کے لیے ان کے رب کے ہاں (بڑے) درجے اور حفاظت اور عزت والا رزق ہے۔

کَمَاۤ اَخۡرَجَکَ رَبُّکَ مِنۡۢ بَیۡتِکَ بِالۡحَقِّ ۪ وَ اِنَّ فَرِیۡقًا مِّنَ الۡمُؤۡمِنِیۡنَ لَکٰرِہُوۡنَ ۙ﴿۵﴾

۵۔ جس طرح تیرے رب نے تجھے تیرے گھر سے حق کے ساتھ نکالا اور مومنوں میں سے ایک گروہ ناخوش تھا۔

یُجَادِلُوۡنَکَ فِی الۡحَقِّ بَعۡدَ مَا تَبَیَّنَ کَاَنَّمَا یُسَاقُوۡنَ اِلَی الۡمَوۡتِ وَ ہُمۡ یَنۡظُرُوۡنَ ؕ﴿۶﴾

۶۔تیرے ساتھ حق کے بارے میں جھگڑتے ہیں اس کے بعد کہ وہ واضح ہوگیا گویا کہ وہ موت کی طرف ہانکے جاتے ہیں  اور وہ دیکھ رہے ہیں۔

وَ اِذۡ یَعِدُکُمُ اللّٰہُ اِحۡدَی الطَّآئِفَتَیۡنِ اَنَّہَا لَکُمۡ وَ تَوَدُّوۡنَ اَنَّ غَیۡرَ ذَاتِ الشَّوۡکَۃِ تَکُوۡنُ لَکُمۡ  وَ یُرِیۡدُ  اللّٰہُ  اَنۡ یُّحِقَّ الۡحَقَّ بِکَلِمٰتِہٖ وَ یَقۡطَعَ دَابِرَ الۡکٰفِرِیۡنَ ۙ﴿۷﴾

۷۔ اور جب اللہ تمہیں دو گروہوں میں سے ایک کا وعدہ دیتا تھا کہ وہ تمہارے لیے ہے اور تم چاہتے تھے کہ جس کے پاس ہتھیار نہیں وہ تمہارے لیے ہو اور اللہ ارادہ کرتا تھا کہ اپنی پیشگوئیوں کے ذریعے سے حق کو ثابت کرے اور کافروں کی جڑ کاٹ دے۔

لِیُحِقَّ الۡحَقَّ وَ یُبۡطِلَ الۡبَاطِلَ وَ لَوۡ  کَرِہَ الۡمُجۡرِمُوۡنَ ۚ﴿۸﴾

۸۔ تاکہ حق کو سچ اور باطل کو جھوٹا کردے، گو مجرم ناپسند کریں۔

اِذۡ تَسۡتَغِیۡثُوۡنَ رَبَّکُمۡ فَاسۡتَجَابَ لَکُمۡ اَنِّیۡ مُمِدُّکُمۡ بِاَلۡفٍ مِّنَ الۡمَلٰٓئِکَۃِ  مُرۡدِفِیۡنَ ﴿۹﴾

۹۔ جب تم اپنے رب سے فریاد کرتے تھے سو اس نے تمہاری پکار سُنی کہ میں ایک ہزار آگے چلنے والے فرشتوں کے ساتھ تمہاری مدد کرنے والا ہوں۔

وَ مَا جَعَلَہُ اللّٰہُ  اِلَّا بُشۡرٰی وَ لِتَطۡمَئِنَّ بِہٖ قُلُوۡبُکُمۡ ۚ وَ مَا النَّصۡرُ اِلَّا مِنۡ عِنۡدِ اللّٰہِ ؕ اِنَّ  اللّٰہَ  عَزِیۡزٌ  حَکِیۡمٌ ﴿٪۱۰﴾

۱۰۔ اور اللہ نے اسے صرف ایک خوش خبری ٹھیرایا اور تاکہ اس کے ساتھ تمہارے دلوں کو اطمینان ہو اور مدد تو اللہ کی طرف سے ہی ہے اللہ غالب حکمت والا ہے۔

رکوع 2

اِذۡ یُغَشِّیۡکُمُ النُّعَاسَ اَمَنَۃً مِّنۡہُ وَ یُنَزِّلُ عَلَیۡکُمۡ مِّنَ السَّمَآءِ مَآءً  لِّیُطَہِّرَکُمۡ بِہٖ وَ یُذۡہِبَ عَنۡکُمۡ رِجۡزَ الشَّیۡطٰنِ وَ لِیَرۡبِطَ عَلٰی قُلُوۡبِکُمۡ وَ یُثَبِّتَ بِہِ  الۡاَقۡدَامَ ﴿ؕ۱۱﴾

۱۱۔ جب اس نے تم پر اپنی طرف سے امن کے لیے اُونگھ  ڈال دی  اور اس نے تم پر بادل سے پانی ا تارا تاکہ اس سے تم کو پاک کرے اور تم سے شیطان کی ناپاکی کو دورکردے اور تاکہ تمہارے دلوں کو قوت دے اور قدموں کو اس کےساتھ مضبوط کرے۔

اِذۡ یُوۡحِیۡ رَبُّکَ اِلَی الۡمَلٰٓئِکَۃِ اَنِّیۡ مَعَکُمۡ فَثَبِّتُوا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡا ؕ سَاُلۡقِیۡ فِیۡ قُلُوۡبِ الَّذِیۡنَ  کَفَرُوا الرُّعۡبَ فَاضۡرِبُوۡا فَوۡقَ الۡاَعۡنَاقِ وَ اضۡرِبُوۡا مِنۡہُمۡ  کُلَّ  بَنَانٍ ﴿ؕ۱۲﴾

۱۲۔ جب تیرا رب فرشتوں کو وحی کرتا تھا کہ میں تمہارے ساتھ ہوں سو جو ایمان لائے ان کو ثابت قدم رکھوں۔ میں ان کے دلوں میں جو کافر ہوئے رعب ڈال دوں گا۔ سو گردنوں کے اوپر مارو اور ان کے پوروں کو کاٹ ڈالو۔

ذٰلِکَ بِاَنَّہُمۡ شَآقُّوا اللّٰہَ  وَ رَسُوۡلَہٗ ۚ وَ مَنۡ یُّشَاقِقِ اللّٰہَ وَ رَسُوۡلَہٗ  فَاِنَّ اللّٰہَ شَدِیۡدُ الۡعِقَابِ  ﴿۱۳﴾

۱۳۔ یہ اس لیے کہ انہوں نے اللہ اور اس کے رسول کی مخالفت کی اور جو اللہ اور اس کے رسول کی مخالفت کرتا ہے تو اللہ (بدی کی) سخت سزا دینے والا ہے۔

ذٰلِکُمۡ فَذُوۡقُوۡہُ وَ اَنَّ لِلۡکٰفِرِیۡنَ عَذَابَ النَّارِ ﴿۱۴﴾

۱۴۔ اس (عذاب) کا مزہ چکھ لو اور (جان لو) کہ کافروں کے لیے آگ کا عذاب ہے۔

یٰۤاَیُّہَا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡۤا  اِذَا لَقِیۡتُمُ  الَّذِیۡنَ کَفَرُوۡا  زَحۡفًا  فَلَا  تُوَلُّوۡہُمُ  الۡاَدۡبَارَ ﴿ۚ۱۵﴾

۱۵۔ اے لوگو جو ایمان لائے ہو! جب تم ان سے جو کافر ہیں جنگ کی حالت میں ملو تو ان سے پیٹھ نہ پھیرو۔

وَ مَنۡ یُّوَلِّہِمۡ یَوۡمَئِذٍ دُبُرَہٗۤ  اِلَّا مُتَحَرِّفًا لِّقِتَالٍ اَوۡ مُتَحَیِّزًا اِلٰی فِئَۃٍ فَقَدۡ بَآءَ بِغَضَبٍ مِّنَ اللّٰہِ وَ مَاۡوٰىہُ جَہَنَّمُ ؕ وَ بِئۡسَ  الۡمَصِیۡرُ ﴿۱۶﴾

۱۶۔ اور جو کوئی اس دن اُن سے اپنی پیٹھ پھیرے سوائے اس کے کہ جنگ کے لیے ایک طرف پھرجائے یا کسی جماعت کے ساتھ پناہ لے تو وہ اللہ کی ناراضگی لے پھرا اور اس کا ٹھکانا دوزخ ہے اور وہ بُری جگہ ہے۔

فَلَمۡ تَقۡتُلُوۡہُمۡ وَ لٰکِنَّ اللّٰہَ  قَتَلَہُمۡ ۪ وَ مَا رَمَیۡتَ اِذۡ رَمَیۡتَ وَ لٰکِنَّ اللّٰہَ رَمٰی ۚ وَ لِیُبۡلِیَ  الۡمُؤۡمِنِیۡنَ  مِنۡہُ  بَلَآءً  حَسَنًا ؕ اِنَّ اللّٰہَ  سَمِیۡعٌ  عَلِیۡمٌ ﴿۱۷﴾

۱۷۔ سو تم نے ان کو نہیں مارا بلکہ اللہ نے ان کو مارا۔ اور جب تو نے پھینکا تو تُو نے نہیں پھینکا بلکہ اللہ نے پھینکا۔ اور تاکہ وہ مومنوں کو اپنی طرف سے اچھا انعام دے۔ اللہ سُننے والا جاننے والا ہے۔

ذٰلِکُمۡ وَ اَنَّ اللّٰہَ  مُوۡہِنُ کَیۡدِ الۡکٰفِرِیۡنَ ﴿۱۸﴾

۱۸۔ یہ (تو ہوچکا) اور جان لو کہ اللہ کافروں کی جنگ کو کمزور کرنے والا ہے۔

اِنۡ تَسۡتَفۡتِحُوۡا فَقَدۡ جَآءَکُمُ الۡفَتۡحُ ۚ وَ اِنۡ تَنۡتَہُوۡا فَہُوَ خَیۡرٌ  لَّکُمۡ ۚ وَ اِنۡ تَعُوۡدُوۡا نَعُدۡ ۚ وَ لَنۡ تُغۡنِیَ عَنۡکُمۡ فِئَتُکُمۡ شَیۡئًا وَّ لَوۡ  کَثُرَتۡ ۙ وَ اَنَّ اللّٰہَ مَعَ  الۡمُؤۡمِنِیۡنَ ﴿٪۱۹﴾

۱۹۔ اگر تم فیصلہ چاہتے تھے تو فیصلہ تمہارے پاس آگیا  اور اگر تم رک جاؤ تو یہ تمہارے لیے بہتر ہے اور اگر تم پھر (جنگ) کر وگے ہم بھی پھر (سزا) دیں گے اور تمہارا جتھا تمہارے کچھ کام نہ آئے گا، اگرچہ بہت ہوں اور (جان لو) کہ اللہ مومنوں کےساتھ ہے۔

رکوع 3

یٰۤاَیُّہَا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡۤا اَطِیۡعُوا اللّٰہَ وَ رَسُوۡلَہٗ  وَ لَا تَوَلَّوۡا عَنۡہُ وَ اَنۡتُمۡ تَسۡمَعُوۡنَ ﴿ۚۖ۲۰﴾

۲۰۔ اے لوگو جو ایمان لائے ہو  اللہ اور اس کے رسول کی فرمانبرداری کرو اور اس سے مت پھرو درآنحالیکہ تم سنتے ہو۔

وَ لَا تَکُوۡنُوۡا کَالَّذِیۡنَ قَالُوۡا سَمِعۡنَا وَ ہُمۡ لَا  یَسۡمَعُوۡنَ ﴿۲۱﴾

۲۱۔ اور ان لوگوں کی طرح مت ہوجاؤ جنہوں نے کہا ہم سنتے ہیں،  اور وہ قبول نہیں کرتے۔

اِنَّ شَرَّ الدَّوَآبِّ عِنۡدَ اللّٰہِ الصُّمُّ الۡبُکۡمُ  الَّذِیۡنَ  لَا  یَعۡقِلُوۡنَ ﴿۲۲﴾

۲۲۔ اللہ کے نزدیک سب جانداروں سے بدتر وہ بہرے گونگے ہیں جو عقل سے کام نہیں لیتے۔

وَ لَوۡ عَلِمَ اللّٰہُ  فِیۡہِمۡ خَیۡرًا لَّاَسۡمَعَہُمۡ ؕ وَ لَوۡ  اَسۡمَعَہُمۡ  لَتَوَلَّوۡا  وَّ ہُمۡ  مُّعۡرِضُوۡنَ ﴿۲۳﴾

۲۳۔ اور اگر اللہ ان میں بھلائی جانتا تو ان کو سناتا اور اگر ان کو سنائے تو وہ پھر جائیں اور وہ منہ پھیرنے والے ہوں۔

یٰۤاَیُّہَا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوا اسۡتَجِیۡبُوۡا لِلّٰہِ وَ لِلرَّسُوۡلِ  اِذَا دَعَاکُمۡ  لِمَا یُحۡیِیۡکُمۡ ۚ وَ اعۡلَمُوۡۤا اَنَّ اللّٰہَ یَحُوۡلُ بَیۡنَ الۡمَرۡءِ وَ قَلۡبِہٖ  وَ اَنَّہٗۤ   اِلَیۡہِ  تُحۡشَرُوۡنَ ﴿۲۴﴾

۲۴۔ اے لوگو جو ایمان لائے ہو  اللہ اور رسول کا حکم مانو،  جب وہ تم کو اس کام کے لیے بلاتا ہے جو تمہیں زندگی دیتا ہے۔ اور جان لو کہ اللہ انسان اور اس کے دل کے درمیان حائل  (ہوتا) ہے اور کہ تم اس کی طرف اکٹھے کیے جاؤ گے۔

وَ اتَّقُوۡا فِتۡنَۃً لَّا تُصِیۡبَنَّ الَّذِیۡنَ ظَلَمُوۡا مِنۡکُمۡ خَآصَّۃً ۚ وَ اعۡلَمُوۡۤا  اَنَّ اللّٰہَ  شَدِیۡدُ  الۡعِقَابِ ﴿۲۵﴾

۲۵۔ اور اس عظیم الشان فتنہ سے بچاؤ کرلو جو خاص کر اُن لوگوں کو نہ پہنچے گا  جو تم میں سے ظالم ہیں اور جان لو کہ اللہ (بدی کی) سزا دینے میں سخت ہے۔

وَ اذۡکُرُوۡۤا اِذۡ  اَنۡتُمۡ  قَلِیۡلٌ  مُّسۡتَضۡعَفُوۡنَ فِی الۡاَرۡضِ تَخَافُوۡنَ  اَنۡ  یَّتَخَطَّفَکُمُ النَّاسُ فَاٰوٰىکُمۡ وَ اَیَّدَکُمۡ بِنَصۡرِہٖ وَ رَزَقَکُمۡ مِّنَ الطَّیِّبٰتِ لَعَلَّکُمۡ تَشۡکُرُوۡنَ ﴿۲۶﴾

۲۶۔ اور یاد کرو جب تم تھوڑے تھے زمین میں کمزور تھے ڈرتے تھے کہ لوگ تم کو زبردستی پکڑ نہ لے جائیں، سو اس نے تم کو پناہ دی اور اپنی نصرت کے ساتھ تمہاری تائید کی اور تم کو اچھی چیزوں سے رزق دیا تاکہ تم شکر کرو۔

یٰۤاَیُّہَا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡا لَا تَخُوۡنُوا اللّٰہَ وَ الرَّسُوۡلَ وَ تَخُوۡنُوۡۤا اَمٰنٰتِکُمۡ وَ اَنۡتُمۡ تَعۡلَمُوۡنَ ﴿۲۷﴾

۲۷۔ اے لوگو جو ایمان لائے ہو اللہ اور رسول کی خیانت نہ کرو ۔ اور (نہ) اپنی امانتوں میں خیانت کرو حالانکہ تم جانتے ہو۔

وَ اعۡلَمُوۡۤا  اَنَّمَاۤ   اَمۡوَالُکُمۡ  وَ اَوۡلَادُکُمۡ  فِتۡنَۃٌ ۙ وَّ اَنَّ اللّٰہَ عِنۡدَہٗۤ  اَجۡرٌ  عَظِیۡمٌ ﴿٪۲۸﴾

۲۸۔ اور جان لو کہ تمہارے مال اور تمہاری اولاد آزمائش ہے اور یہ کہ اللہ کے ہاں بھاری اجر ہے۔

رکوع 4

یٰۤاَیُّہَا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡۤا اِنۡ تَتَّقُوا اللّٰہَ یَجۡعَلۡ لَّکُمۡ فُرۡقَانًا وَّ یُکَفِّرۡ عَنۡکُمۡ سَیِّاٰتِکُمۡ وَ یَغۡفِرۡ لَکُمۡ ؕ وَ اللّٰہُ  ذُو الۡفَضۡلِ  الۡعَظِیۡمِ ﴿۲۹﴾

۲۹۔ اے لوگو جو ایمان لائے ہو اگر تم اللہ کا تقویٰ کرو تو وہ تمہارے لیے (حق و باطل میں) فرق کردے گا اور تمہاری بُرائیاں تم سے دور کردے گا اور تمہاری حفاظت کرے گا اور اللہ بڑے فضل کا مالک ہے۔

وَ اِذۡ یَمۡکُرُ بِکَ الَّذِیۡنَ کَفَرُوۡا لِیُثۡبِتُوۡکَ اَوۡ یَقۡتُلُوۡکَ اَوۡ یُخۡرِجُوۡکَ ؕ وَ یَمۡکُرُوۡنَ وَ یَمۡکُرُ  اللّٰہُ  ؕ وَ اللّٰہُ خَیۡرُ الۡمٰکِرِیۡنَ ﴿۳۰﴾

۳۰۔ اور جب وہ جو کافر ہوئے تیرے متعلق تدبیریں کرتے تھے تا کہ تجھے قید کریں یا تجھے قتل کریں یا تجھے نکال دیں اور وہ تدبیریں کرتے تھے۔  اور اللہ بھی تدبیر کرتا تھا اور اللہ بہترین تدبیر کرنے والاہے۔

وَ اِذَا تُتۡلٰی عَلَیۡہِمۡ اٰیٰتُنَا قَالُوۡا قَدۡ سَمِعۡنَا لَوۡ  نَشَآءُ   لَقُلۡنَا مِثۡلَ  ہٰذَاۤ  ۙ اِنۡ  ہٰذَاۤ   اِلَّاۤ   اَسَاطِیۡرُ  الۡاَوَّلِیۡنَ ﴿۳۱﴾

۳۱۔ اور جب ان پر ہماری آیتیں پڑھی جاتی ہیں کہتے ہیں ہم نے سُن لیا۔ اگر ہم چاہیں،  تو اس کی مثل کہہ لیں۔ یہ کچھ نہیں مگر پہلوں کی کہانیاں ہیں۔

وَ  اِذۡ  قَالُوا اللّٰہُمَّ  اِنۡ کَانَ ہٰذَا ہُوَ الۡحَقَّ مِنۡ عِنۡدِکَ فَاَمۡطِرۡ عَلَیۡنَا حِجَارَۃً مِّنَ السَّمَآءِ اَوِ ائۡتِنَا بِعَذَابٍ اَلِیۡمٍ ﴿۳۲﴾

۳۲۔ اور جب انہوں نے کہا اے اللہ اگر یہ تیری طرف سے حق ہے تو ہم پر آسمان سے پتھر برسا ، یا ہم پر دردناک عذاب بھیج۔

وَ مَا کَانَ اللّٰہُ  لِیُعَذِّبَہُمۡ  وَ اَنۡتَ فِیۡہِمۡ ؕ وَ مَا کَانَ اللّٰہُ مُعَذِّبَہُمۡ وَ ہُمۡ یَسۡتَغۡفِرُوۡنَ ﴿۳۳﴾

۳۳۔ اور اللہ ایسا نہ تھا کہ ان کو عذاب دیتا حالانکہ تو ان میں تھا  اور اللہ ان کو عذاب دینےو الا نہ تھا حالانکہ وہ استغفار کرتے ہوں۔

وَ مَا لَہُمۡ  اَلَّا یُعَذِّبَہُمُ اللّٰہُ  وَ ہُمۡ  یَصُدُّوۡنَ عَنِ الۡمَسۡجِدِ الۡحَرَامِ وَ مَا کَانُوۡۤا اَوۡلِیَآءَہٗ ؕ اِنۡ  اَوۡلِیَآؤُہٗۤ  اِلَّا الۡمُتَّقُوۡنَ وَ لٰکِنَّ  اَکۡثَرَہُمۡ  لَا  یَعۡلَمُوۡنَ ﴿۳۴﴾

۳۴۔ اور اُن کا کیا عذر ہے کہ اللہ ان کو عذاب نہ دے اور وہ مسجد حرام سے روکتے ہیں اور وہ اس کے متولی نہیں۔ اس کے متولی سوائے متقیوں کے اور کوئی نہیں ہوسکتے لیکن ان میں سے بہت نہیں جانتے۔

وَ مَا کَانَ صَلَاتُہُمۡ عِنۡدَ الۡبَیۡتِ اِلَّا مُکَآءً   وَّ تَصۡدِیَۃً ؕ فَذُوۡقُوا الۡعَذَابَ بِمَا کُنۡتُمۡ  تَکۡفُرُوۡنَ ﴿۳۵﴾

۳۵۔ اور ان کی نماز خانہ (کعبہ) کے پاس سوائے سیٹیاں بجانے اور تالیاں پیٹنے کے اور کچھ نہیں۔ سو عذاب چکھو،  اس لیے کہ تم کفر کرتے تھے۔

اِنَّ الَّذِیۡنَ کَفَرُوۡا یُنۡفِقُوۡنَ اَمۡوَالَہُمۡ لِیَصُدُّوۡا عَنۡ سَبِیۡلِ اللّٰہِ ؕ فَسَیُنۡفِقُوۡنَہَا ثُمَّ تَکُوۡنُ عَلَیۡہِمۡ حَسۡرَۃً ثُمَّ یُغۡلَبُوۡنَ ۬ؕ وَ الَّذِیۡنَ کَفَرُوۡۤا اِلٰی جَہَنَّمَ یُحۡشَرُوۡنَ ﴿ۙ۳۶﴾

۳۶۔ وہ جو کافر ہیں اپنے مالوں کو خرچ کرتے ہیں، تاکہ اللہ کی راہ سے روکیں، سو ان کو خرچ کرتے رہیں گے پھر وہ ان کے لیے پچھتاوا ہوں گے۔ پھر وہ مغلوب کیے جائیں گے اور جو کافر ہیں وہ جہنم کی طرف اکٹھے کیے جائیں گے۔

لِیَمِیۡزَ اللّٰہُ  الۡخَبِیۡثَ مِنَ الطَّیِّبِ وَ یَجۡعَلَ الۡخَبِیۡثَ بَعۡضَہٗ عَلٰی بَعۡضٍ فَیَرۡکُمَہٗ جَمِیۡعًا فَیَجۡعَلَہٗ  فِیۡ جَہَنَّمَ ؕ اُولٰٓئِکَ  ہُمُ  الۡخٰسِرُوۡنَ ﴿٪۳۷﴾

۳۷۔ تاکہ اللہ پاک کو ناپاک سے الگ کردے اور ناپاک کو ایک دوسرے پر رکھتا چلا جائے پھر سب کو ایک ڈھیر بنادے پھر اس کو جہنم میں ڈال دے وہی نقصان اٹھانے والے ہیں۔

رکوع 5

قُلۡ  لِّلَّذِیۡنَ  کَفَرُوۡۤا  اِنۡ یَّنۡتَہُوۡا یُغۡفَرۡ لَہُمۡ مَّا قَدۡ سَلَفَ ۚ وَ اِنۡ یَّعُوۡدُوۡا فَقَدۡ مَضَتۡ سُنَّتُ  الۡاَوَّلِیۡنَ ﴿۳۸﴾

۳۸۔ ان لوگوں کو جنہوں نے کفر کیا، کہہ دو اگر وہ رک جائیں تو جو گزرچکا اُن کو معاف کردیا جائے گا۔ اور اگر وہی کام پھر کریں تو پہلوں کامعاملہ گزر ہی چکا ہے۔

وَ قَاتِلُوۡہُمۡ حَتّٰی لَا تَکُوۡنَ فِتۡنَۃٌ وَّ یَکُوۡنَ الدِّیۡنُ کُلُّہٗ  لِلّٰہِ ۚ  فَاِنِ انۡتَہَوۡا فَاِنَّ اللّٰہَ  بِمَا یَعۡمَلُوۡنَ  بَصِیۡرٌ ﴿۳۹﴾

۳۹۔ اور ان کے ساتھ جنگ کرو ، یہاں تک کہ (دین کے لیے) دکھ دینا نہ رہے اور دین سب کے سب اللہ کے لیے ہوں پھر اگر وہ رک جائیں  تو اللہ اس کو دیکھ رہا ہے جو وہ کرتے ہیں۔

وَ  اِنۡ تَوَلَّوۡا  فَاعۡلَمُوۡۤا  اَنَّ اللّٰہَ مَوۡلٰىکُمۡ ؕ نِعۡمَ  الۡمَوۡلٰی  وَ نِعۡمَ النَّصِیۡرُ ﴿۴۰﴾

۴۰۔ اور اگر پھر جائیں تو جان لو کہ اللہ تمہارا مولیٰ ہے کیا ہی اچھا مولیٰ اور کیا ہی اچھا مددگار ہے۔

وَ اعۡلَمُوۡۤا اَنَّمَا غَنِمۡتُمۡ مِّنۡ شَیۡءٍ فَاَنَّ لِلّٰہِ خُمُسَہٗ وَ لِلرَّسُوۡلِ وَ لِذِی الۡقُرۡبٰی وَ الۡیَتٰمٰی وَ الۡمَسٰکِیۡنِ  وَ  ابۡنِ السَّبِیۡلِ ۙ اِنۡ  کُنۡتُمۡ  اٰمَنۡتُمۡ بِاللّٰہِ وَ مَاۤ  اَنۡزَلۡنَا عَلٰی عَبۡدِنَا یَوۡمَ الۡفُرۡقَانِ  یَوۡمَ الۡتَقَی الۡجَمۡعٰنِ ؕ وَ اللّٰہُ عَلٰی کُلِّ شَیۡءٍ قَدِیۡرٌ ﴿۴۱﴾

۴۱۔ اور جان لو کہ کوئی چیز تم فتح پاکر حاصل کرو،  تو اس کا پانچواں حِصّہ اللہ کے لیےہے   اور رسول کے لیے اور قریبیوں کے لیے اور یتیموں اور مسکینوں اور مسافروں  (کے لیے)  اگر تم اللہ پر ایمان لاتے ہو اور اس (پر) جو ہم نے اپنے بندہ پر حق و باطل کے فرق کرنے کے دن اتارا، جس دن دو گروہوں میں مڈھ بھیڑ ہوئی اور اللہ ہر چیز پر قادر ہے۔

اِذۡ اَنۡتُمۡ بِالۡعُدۡوَۃِ الدُّنۡیَا وَ ہُمۡ بِالۡعُدۡوَۃِ الۡقُصۡوٰی وَ الرَّکۡبُ اَسۡفَلَ مِنۡکُمۡ ؕ وَ لَوۡ تَوَاعَدۡتُّمۡ لَاخۡتَلَفۡتُمۡ فِی الۡمِیۡعٰدِ ۙ وَ لٰکِنۡ لِّیَقۡضِیَ اللّٰہُ اَمۡرًا کَانَ مَفۡعُوۡلًا ۬ۙ لِّیَہۡلِکَ مَنۡ ہَلَکَ عَنۡۢ بَیِّنَۃٍ وَّ یَحۡیٰی مَنۡ حَیَّ عَنۡۢ بَیِّنَۃٍ ؕ وَ اِنَّ اللّٰہَ لَسَمِیۡعٌ عَلِیۡمٌ ﴿ۙ۴۲﴾

۴۲۔ جب تم ورلے کنارے پر تھے اور وہ پرلے کنارے پر اور قافلہ تم سے نیچے تھا اور اگر تم (دونوں گروہ) آپس میں قرار داد کرتے تو تم میعاد میں اختلاف کرتے،  لیکن (ایسا ہوا) تاکہ اللہ ایک امر کا فیصلہ کردے جو ہو کر رہنا تھا تاکہ جو ہلاک ہوتا ہے وہ کھلی دلیل سے ہلاک ہو اور جو زندہ ہوتا ہے وہ کھلی دلیل سے زندہ ہو اور اللہ یقیناً سننے والا (اور ) جاننےو الا ہے۔

اِذۡ یُرِیۡکَہُمُ اللّٰہُ فِیۡ مَنَامِکَ قَلِیۡلًا ؕ وَ لَوۡ اَرٰىکَہُمۡ کَثِیۡرًا لَّفَشِلۡتُمۡ وَ لَتَنَازَعۡتُمۡ فِی الۡاَمۡرِ وَ لٰکِنَّ اللّٰہَ سَلَّمَ ؕ اِنَّہٗ عَلِیۡمٌۢ بِذَاتِ الصُّدُوۡرِ ﴿۴۳﴾

۴۳۔ جب اللہ نے تجھے تیرے خواب میں انہیں تھوڑا دکھایا،  اور اگر وہ تجھے ان کو بہت دکھاتا تو تم ہمت ہار دیتے اور تم معاملہ میں جھگڑنے لگتے، لیکن اللہ نے بچالیا۔ وہ سینوں کی باتوں کو جاننےو الا ہے۔

وَ اِذۡ یُرِیۡکُمُوۡہُمۡ اِذِ الۡتَقَیۡتُمۡ فِیۡۤ اَعۡیُنِکُمۡ قَلِیۡلًا وَّ یُقَلِّلُکُمۡ فِیۡۤ اَعۡیُنِہِمۡ لِیَقۡضِیَ اللّٰہُ اَمۡرًا کَانَ مَفۡعُوۡلًا ؕ وَ اِلَی اللّٰہِ تُرۡجَعُ الۡاُمُوۡرُ ﴿٪۴۴﴾

۴۴۔ اور جب تم ایک دوسرے کے سامنے آئے تو تمہاری  نظروں میں انہیں تھوڑا کرکے دکھایا اور ان کی آنکھوں میں تم کو تھوڑا کرکے دکھایا تاکہ اللہ ایک کام کا فیصلہ کردے جو ہوکر رہنا تھا اور اللہ کی طرف ہی سب کام لوٹائے جاتے ہیں۔

رکوع 6

یٰۤاَیُّہَا الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡۤا اِذَا لَقِیۡتُمۡ فِئَۃً فَاثۡبُتُوۡا وَ اذۡکُرُوا اللّٰہَ کَثِیۡرًا لَّعَلَّکُمۡ تُفۡلِحُوۡنَ ﴿ۚ۴۵﴾

۴۵۔ اے لوگو ! جو ایمان لائے ہو جب تمہارا کسی جماعت سے مقابلہ ہو تو ثابت قدم رہو اور اللہ کو بہت یاد کرو تاکہ تم کامیاب ہو۔

وَ اَطِیۡعُوا اللّٰہَ وَ رَسُوۡلَہٗ وَ لَا تَنَازَعُوۡا فَتَفۡشَلُوۡا وَ تَذۡہَبَ رِیۡحُکُمۡ وَ اصۡبِرُوۡا ؕ اِنَّ اللّٰہَ مَعَ الصّٰبِرِیۡنَ ﴿ۚ۴۶﴾

۴۶۔ اور اللہ اور اس کے رسول کی فرمانبرداری کرو اور آپس میں جھگڑا نہ کرو  ورنہ تم ہمت ہار دو گے اور تمہاری ہَوا جاتی رہے گی اور صبر کرو،  اللہ صبر کرنے والوں کےساتھ ہے۔

وَ لَا تَکُوۡنُوۡا کَالَّذِیۡنَ خَرَجُوۡا مِنۡ دِیَارِہِمۡ بَطَرًا وَّ رِئَآءَ النَّاسِ وَ یَصُدُّوۡنَ عَنۡ سَبِیۡلِ اللّٰہِ ؕ وَ اللّٰہُ بِمَا یَعۡمَلُوۡنَ مُحِیۡطٌ ﴿۴۷﴾

۴۷۔ اور ان لوگوں کی طرح نہ ہو جو اتراتے ہوئے اور لوگوں کے  دکھاوے کے لیے اپنے گھروں سے نکلے اور وہ اللہ کی راہ سے روکتے تھے۔  اور اللہ اس کا احاطہ کیے ہوئے ہے جو وہ کرتے ہیں۔

وَ اِذۡ زَیَّنَ لَہُمُ الشَّیۡطٰنُ اَعۡمَالَہُمۡ وَ قَالَ لَا غَالِبَ لَکُمُ الۡیَوۡمَ مِنَ النَّاسِ وَ اِنِّیۡ جَارٌ لَّکُمۡ ۚ فَلَمَّا تَرَآءَتِ الۡفِئَتٰنِ نَکَصَ عَلٰی عَقِبَیۡہِ وَ قَالَ اِنِّیۡ بَرِیۡٓءٌ مِّنۡکُمۡ اِنِّیۡۤ اَرٰی مَا لَا تَرَوۡنَ اِنِّیۡۤ اَخَافُ اللّٰہَ ؕ وَ اللّٰہُ شَدِیۡدُ الۡعِقَابِ ﴿٪۴۸﴾

۴۸۔ اور جب شیطان نے اُن کو اُن کے عمل خوب صورت بنا کر دکھائے اور کہا آج لوگوں میں سے کوئی تم پر غالب نہیں آسکتا اور میں تمہارا حامی ہوں۔ پھر جب دونوں گروہ ایک دوسرے کے سامنے آئے الٹے پاؤں پھر گیا او رکہا میرا تم سے کچھ واسطہ نہیں، میں وہ دیکھتا ہوں جو تم نہیں دیکھتے،  میں اللہ سے ڈرتا ہوں اور اللہ سزا دینے میں سخت ہے۔

رکوع 7

اِذۡ یَقُوۡلُ الۡمُنٰفِقُوۡنَ وَ الَّذِیۡنَ فِیۡ قُلُوۡبِہِمۡ مَّرَضٌ غَرَّہٰۤؤُ لَآءِ دِیۡنُہُمۡ ؕ وَ مَنۡ یَّتَوَکَّلۡ عَلَی اللّٰہِ فَاِنَّ اللّٰہَ عَزِیۡزٌ حَکِیۡمٌ ﴿۴۹﴾

۴۹۔ جب منافق اور وہ جن کے دلوں میں بیماری تھی کہنے لگے اُن لوگوں کو ان کے دین نے دھوکا دیا ہے اور جو شخص اللہ پر بھروسہ کرتا ہے تو اللہ غالب حکمت والا ہے۔

وَ لَوۡ تَرٰۤی اِذۡ یَتَوَفَّی الَّذِیۡنَ کَفَرُوا ۙ الۡمَلٰٓئِکَۃُ یَضۡرِبُوۡنَ وُجُوۡہَہُمۡ وَ اَدۡبَارَہُمۡ ۚ وَ ذُوۡقُوۡا عَذَابَ الۡحَرِیۡقِ ﴿۵۰﴾

۵۰۔ اور اگر تو دیکھے جب فرشتے کافروں کی روح قبض کرتے ہیں، ان کے مونہوں اور پیٹھوں کو مارتے ہیں اور جلنے کا عذاب چکھو۔

ذٰلِکَ بِمَا قَدَّمَتۡ اَیۡدِیۡکُمۡ وَ اَنَّ اللّٰہَ لَیۡسَ بِظَلَّامٍ لِّلۡعَبِیۡدِ ﴿ۙ۵۱﴾

۵۱۔ یہ اس کی سزا ہے جو تمہارے ہاتھوں نے آگے بھیجا ہے۔  اور کہ اللہ بندوں پر کچھ بھی ظلم کرنےو الانہیں۔

کَدَاۡبِ اٰلِ فِرۡعَوۡنَ ۙ وَ الَّذِیۡنَ مِنۡ قَبۡلِہِمۡ ؕ کَفَرُوۡا بِاٰیٰتِ اللّٰہِ فَاَخَذَہُمُ اللّٰہُ بِذُنُوۡبِہِمۡ ؕ اِنَّ اللّٰہَ قَوِیٌّ شَدِیۡدُ الۡعِقَابِ ﴿۵۲﴾

۵۲۔ فرعون کے لوگوں کی طرح اور جو ان سے پہلے ہوئے انہوں نےا للہ کی آیتوں کا انکار کیا سو اللہ نے ان کو ان کے گناہوں کی وجہ سے پکڑا۔ اللہ طاقتور سزا دینے میں سخت ہے۔

ذٰلِکَ بِاَنَّ اللّٰہَ لَمۡ یَکُ مُغَیِّرًا نِّعۡمَۃً اَنۡعَمَہَا عَلٰی قَوۡمٍ حَتّٰی یُغَیِّرُوۡا مَا بِاَنۡفُسِہِمۡ ۙ وَ اَنَّ اللّٰہَ سَمِیۡعٌ عَلِیۡمٌ ﴿ۙ۵۳﴾

۵۳۔ یہ اس لیے کہ اللہ کبھی کسی نعمت کو نہیں بدلتا، جو اس نے کسی قوم پرکی ہو، جب تک کہ وہ خود اپنی حالتوں کو نہ بدلیں اور کہ اللہ سننے والا جاننے والا ہے۔

کَدَاۡبِ اٰلِ فِرۡعَوۡنَ ۙ وَ الَّذِیۡنَ مِنۡ قَبۡلِہِمۡ ؕ کَذَّبُوۡا بِاٰیٰتِ رَبِّہِمۡ فَاَہۡلَکۡنٰہُمۡ بِذُنُوۡبِہِمۡ وَ اَغۡرَقۡنَاۤ اٰلَ فِرۡعَوۡنَ ۚ وَ کُلٌّ کَانُوۡا ظٰلِمِیۡنَ ﴿۵۴﴾

۵۴۔ فرعون کے لوگوں کی طرح اور جو اُن سے پہلے ہوئے انہوں نے اپنے رب کی آیتوں کو جھٹلایا،  سو ہم نے اُن کو اُن کے گناہوں کی وجہ سے ہلاک کردیا اور فرعون کے لوگوں کو غرق کردیا اور سب ظالم تھے۔

اِنَّ شَرَّ الدَّوَآبِّ عِنۡدَ اللّٰہِ الَّذِیۡنَ کَفَرُوۡا فَہُمۡ لَا یُؤۡمِنُوۡنَ ﴿ۖۚ۵۵﴾

۵۵۔ اللہ کے نزدیک بدترین جاندار وہ ہیں جو کافر ہوئے ، پھر وہ ایمان لاتے ہی نہیں۔

اَلَّذِیۡنَ عٰہَدۡتَّ مِنۡہُمۡ ثُمَّ یَنۡقُضُوۡنَ عَہۡدَہُمۡ فِیۡ کُلِّ مَرَّۃٍ وَّ ہُمۡ لَا یَتَّقُوۡنَ ﴿۵۶﴾

۵۶۔ وہ جن سے تو عہد کرتا ہے پھر وہ اپنا عہد ہر بار توڑ دیتےہیں، اور وہ (خلاف ورزی عہد سے) نہیں بچتے۔

فَاِمَّا تَثۡقَفَنَّہُمۡ فِی الۡحَرۡبِ فَشَرِّدۡ بِہِمۡ مَّنۡ خَلۡفَہُمۡ لَعَلَّہُمۡ یَذَّکَّرُوۡنَ ﴿۵۷﴾

۵۷۔ سو اگر تو ان کو جنگ میں پائے تو اُن (کی عبرتناک سزا) سے اُن کو منتشر کردے جو اُن کے پیچھے ہیں تاکہ وہ نصیحت حاصل کریں۔

وَ اِمَّا تَخَافَنَّ مِنۡ قَوۡمٍ خِیَانَۃً فَانۡۢبِذۡ اِلَیۡہِمۡ عَلٰی سَوَآءٍ ؕ اِنَّ اللّٰہَ لَا یُحِبُّ الۡخَآئِنِیۡنَ ﴿٪۵۸﴾

۵۸۔ اور اگر تجھے کسی قوم سے دغابازی کا خوف ہو تو (ان کا عہد) برابری کو ملحوظ رکھتے ہوئے ان کی طرف پھینک دے اللہ دغابازوں سے محبت نہیں کرتا۔

رکوع 8

وَ لَا یَحۡسَبَنَّ الَّذِیۡنَ کَفَرُوۡا سَبَقُوۡا ؕ اِنَّہُمۡ لَا یُعۡجِزُوۡنَ ﴿۵۹﴾

۵۹۔ اور جو کافر ہیں وہ یہ خیال نہ کریں کہ وہ آگے نکل گئے وہ عاجز نہیں کرسکتے۔

وَ اَعِدُّوۡا لَہُمۡ مَّا اسۡتَطَعۡتُمۡ مِّنۡ قُوَّۃٍ وَّ مِنۡ رِّبَاطِ الۡخَیۡلِ تُرۡہِبُوۡنَ بِہٖ عَدُوَّ اللّٰہِ وَ عَدُوَّکُمۡ وَ اٰخَرِیۡنَ مِنۡ دُوۡنِہِمۡ ۚ لَا تَعۡلَمُوۡنَہُمۡ ۚ اَللّٰہُ یَعۡلَمُہُمۡ ؕ وَ مَا تُنۡفِقُوۡا مِنۡ شَیۡءٍ فِیۡ سَبِیۡلِ اللّٰہِ یُوَفَّ اِلَیۡکُمۡ وَ اَنۡتُمۡ لَا تُظۡلَمُوۡنَ ﴿۶۰﴾

۶۰۔ اور جو کچھ طاقت اور گھوڑوں کے سرحدوں پر باندھ رکھنے سے تم سے ہوسکے ان کے لیے تیار رکھو، تم اس کےساتھ اللہ کے دشمن اور اپنے دشمن کو خوف زدہ رکھو اور ان کےسوائے اَوروں کو (بھی) جنہیں تم نہیں جانتے،  اللہ ان کو جانتا ہے۔ اور جو کوئی چیز تم اللہ کی راہ میں خرچ کرو گے تم کو پوری واپس دی جائے گی اور تم پر ظلم نہیں کیا جائے گا۔

وَ اِنۡ جَنَحُوۡا لِلسَّلۡمِ فَاجۡنَحۡ لَہَا وَ تَوَکَّلۡ عَلَی اللّٰہِ ؕ اِنَّہٗ ہُوَ السَّمِیۡعُ الۡعَلِیۡمُ ﴿۶۱﴾

۶۱۔ اور اگر وہ صلح کی طرف جُھکیں تو تُو بھی اس کی طرف جھک جا،  اور اللہ پر بھروسہ رکھ،  وہ سننے والا جاننے والا ہے۔

وَ اِنۡ یُّرِیۡدُوۡۤا اَنۡ یَّخۡدَعُوۡکَ فَاِنَّ حَسۡبَکَ اللّٰہُ ؕ ہُوَ الَّذِیۡۤ اَیَّدَکَ بِنَصۡرِہٖ وَ بِالۡمُؤۡمِنِیۡنَ ﴿ۙ۶۲﴾

۶۲۔ اور اگر ان کا ارادہ ہو کہ تجھے دھوکا دیں،  تو اللہ تجھے بس ہے  وہی ہے جس نے اپنی نصرت کےساتھ اور مومنوں کے ساتھ تجھے قوت دی۔

وَ اَلَّفَ بَیۡنَ قُلُوۡبِہِمۡ ؕ لَوۡ اَنۡفَقۡتَ مَا فِی الۡاَرۡضِ جَمِیۡعًا مَّاۤ اَلَّفۡتَ بَیۡنَ قُلُوۡبِہِمۡ وَ لٰکِنَّ اللّٰہَ اَلَّفَ بَیۡنَہُمۡ ؕ اِنَّہٗ عَزِیۡزٌ حَکِیۡمٌ ﴿۶۳﴾

۶۳۔ اور اس نے ان کے دلوں میں اُلفت ڈالی اگر تو جو کچھ زمین میں ہے سب کا سب خرچ کردیتا تو ان کے دلوں میں اُلفت پیدانہ کرسکتا لیکن اللہ نے ان میں اُلفت ڈال دی وہ غالب حکمت والا ہے۔

یٰۤاَیُّہَا النَّبِیُّ حَسۡبُکَ اللّٰہُ وَ مَنِ اتَّبَعَکَ مِنَ الۡمُؤۡمِنِیۡنَ ﴿٪۶۴﴾

۶۴۔ اے نبی! اللہ تیرے لیے بس ہے اور (اس کے لیے) جو مومنوں میں سے تیرا پیرو ہو۔

رکوع 9

یٰۤاَیُّہَا النَّبِیُّ حَرِّضِ الۡمُؤۡمِنِیۡنَ عَلَی الۡقِتَالِ ؕ اِنۡ یَّکُنۡ مِّنۡکُمۡ عِشۡرُوۡنَ صٰبِرُوۡنَ یَغۡلِبُوۡا مِائَتَیۡنِ ۚ وَ اِنۡ یَّکُنۡ مِّنۡکُمۡ مِّائَۃٌ یَّغۡلِبُوۡۤا اَلۡفًا مِّنَ الَّذِیۡنَ کَفَرُوۡا بِاَنَّہُمۡ قَوۡمٌ لَّا یَفۡقَہُوۡنَ ﴿۶۵﴾

۶۵۔ اے نبی! مومنوں کو جنگ کی رغبت دے۔  اگر تم میں سے بیس صبر کرنے والے ہوں، تو وہ دوسو پر غالب آئیں گے اور اگر تم میں سے ایک سو ہوں،  تو کافروں میں سے ایک ہزار پر غالب آئیں گے،  یہ اِس لیے کہ وہ ایسے لوگ ہیں جو سمجھ سے کام نہیں لیتے۔

اَلۡـٰٔنَ خَفَّفَ اللّٰہُ عَنۡکُمۡ وَ عَلِمَ اَنَّ فِیۡکُمۡ ضَعۡفًا ؕ فَاِنۡ یَّکُنۡ مِّنۡکُمۡ مِّائَۃٌ صَابِرَۃٌ یَّغۡلِبُوۡا مِائَتَیۡنِ ۚ وَ اِنۡ یَّکُنۡ مِّنۡکُمۡ اَلۡفٌ یَّغۡلِبُوۡۤا اَلۡفَیۡنِ بِاِذۡنِ اللّٰہِ ؕ وَ اللّٰہُ مَعَ الصّٰبِرِیۡنَ ﴿۶۶﴾

۶۶۔ اس وقت اللہ نے تمہارا بوجھ ہلکا کردیا اور وہ جانتا ہے کہ تم  میں کمزوری ہے،سو اگر تم میں سے ایک سو صبر کرنے والے ہوں، دو سو پر غالب آئیں گے اور اگر تم میں سے ایک ہزار ہوں اللہ کے حکم سے دو ہزار پر غالب آئیں گے اور اللہ صبر کرنے والوں کے ساتھ ہے۔

مَا کَانَ لِنَبِیٍّ اَنۡ یَّکُوۡنَ لَہٗۤ اَسۡرٰی حَتّٰی یُثۡخِنَ فِی الۡاَرۡضِ ؕ تُرِیۡدُوۡنَ عَرَضَ الدُّنۡیَا ٭ۖ وَ اللّٰہُ یُرِیۡدُ الۡاٰخِرَۃَ ؕ وَ اللّٰہُ عَزِیۡزٌ حَکِیۡمٌ ﴿۶۷﴾

۶۷۔ ایک نبی کے لیے شایاں نہیں کہ اس کے (قبضہ میں) قیدی ہوں جب تک کہ وہ زمین میں جنگ کرکے غالب نہ آئے۔ تم دنیا کا مال چاہتے تھے اور اللہ (تمہارے لیے) آخرت کو چاہتا ہے۔ اور اللہ غالب حکمت والا ہے۔

لَوۡ لَا کِتٰبٌ مِّنَ اللّٰہِ سَبَقَ لَمَسَّکُمۡ فِیۡمَاۤ اَخَذۡتُمۡ عَذَابٌ عَظِیۡمٌ ﴿۶۸﴾

۶۸۔ اگر اللہ کی طرف سے پہلے سے حکم نہ ہوچکا ہوتا،  تو تم کو اس بارے  میں جو تم کرنے لگے تھے بھاری عذاب پہنچ کر رہتا۔

فَکُلُوۡا مِمَّا غَنِمۡتُمۡ حَلٰلًا طَیِّبًا ۫ۖ وَّ اتَّقُوا اللّٰہَ ؕ اِنَّ اللّٰہَ غَفُوۡرٌ رَّحِیۡمٌ ﴿٪۶۹﴾

۶۹۔ اس سے جو تم نے فتح پاکر حاصل کیا ہے حلال طیّب کھاؤ اور اللہ کا تقویٰ کرو اللہ بخشنے والا رحم کرنے والا ہے۔

رکوع 10

یٰۤاَیُّہَا النَّبِیُّ قُلۡ لِّمَنۡ فِیۡۤ اَیۡدِیۡکُمۡ مِّنَ الۡاَسۡرٰۤی ۙ اِنۡ یَّعۡلَمِ اللّٰہُ فِیۡ قُلُوۡبِکُمۡ خَیۡرًا یُّؤۡتِکُمۡ خَیۡرًا مِّمَّاۤ اُخِذَ مِنۡکُمۡ وَ یَغۡفِرۡ لَکُمۡ ؕ وَ اللّٰہُ غَفُوۡرٌ رَّحِیۡمٌ ﴿۷۰﴾

۷۰۔ اے نبی ان کو جو تیرے ہاتھ میں قیدیوں میں سے ہیں کہہ دے،  اگر اللہ تمہارے دلوں میں کوئی بھلائی جانے گا تو تم کو اس سے بہتر دے گا جو تم سے لیا گیا ہے اور تمہیں بخش دے گا  اور اللہ بخشنے والا رحم کرنے والا ہے۔

وَ اِنۡ یُّرِیۡدُوۡا خِیَانَتَکَ فَقَدۡ خَانُوا اللّٰہَ مِنۡ قَبۡلُ فَاَمۡکَنَ مِنۡہُمۡ ؕ وَ اللّٰہُ عَلِیۡمٌ حَکِیۡمٌ ﴿۷۱﴾

۷۱۔ اور اگر وہ تجھ سے دغا کرنا چاہیں تو پہلے اللہ سے دغا کرچکے ہیں سو اُس نے ان پر (تم کو) قابو دے دیا‘ اور اللہ جاننےو الا حکمت والا ہے۔

اِنَّ الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡا وَ ہَاجَرُوۡا وَ جٰہَدُوۡا بِاَمۡوَالِہِمۡ وَ اَنۡفُسِہِمۡ فِیۡ سَبِیۡلِ اللّٰہِ وَ الَّذِیۡنَ اٰوَوۡا وَّ نَصَرُوۡۤا اُولٰٓئِکَ بَعۡضُہُمۡ اَوۡلِیَآءُ بَعۡضٍ ؕ وَ الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡا وَ لَمۡ یُہَاجِرُوۡا مَا لَکُمۡ مِّنۡ وَّلَایَتِہِمۡ مِّنۡ شَیۡءٍ حَتّٰی یُہَاجِرُوۡا ۚ وَ اِنِ اسۡتَنۡصَرُوۡکُمۡ فِی الدِّیۡنِ فَعَلَیۡکُمُ النَّصۡرُ اِلَّا عَلٰی قَوۡمٍۭ بَیۡنَکُمۡ وَ بَیۡنَہُمۡ مِّیۡثَاقٌ ؕ وَ اللّٰہُ بِمَا تَعۡمَلُوۡنَ بَصِیۡرٌ ﴿۷۲﴾

۷۲۔ جو ایمان لائے اور انہوں نے ہجرت کی اور اپنے مالوں اور اپنی جانوں کے ساتھ اللہ کی راہ میں جہاد کیا،  اور وہ جنہوں نے (ان کو) پناہ دی اور مدد دی یہ ایک دوسرے کے دوست ہیں اور وہ جو ایمان لائے اور انہوں نے ہجرت نہیں کی تم پر ان کی دوستی کا کوئی حق نہیں، یہاں تک کہ وہ ہجرت کریں  اور اگر تم سے دین کے متعلق مدد چاہیں تو تم پر مدد دینا فرض ہے سوائے اس کے کہ (یہ مدد) ان لوگوں کے خلاف ہو جن کے اور تمہارے درمیان عہد ہے  اور اللہ جو تم کرتے ہو اسے دیکھتا ہے۔

وَ الَّذِیۡنَ کَفَرُوۡا بَعۡضُہُمۡ اَوۡلِیَآءُ بَعۡضٍ ؕ اِلَّا تَفۡعَلُوۡہُ تَکُنۡ فِتۡنَۃٌ فِی الۡاَرۡضِ وَ فَسَادٌ کَبِیۡرٌ ﴿ؕ۷۳﴾

۷۳۔ اور جو کافر ہیں وہ ایک دوسرے کے دوست ہیں اگر تم ایسا نہ کرو گے تو ملک میں فتنہ اور بڑا فساد ہوگا۔

وَ الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡا وَ ہَاجَرُوۡا وَ جٰہَدُوۡا فِیۡ سَبِیۡلِ اللّٰہِ وَ الَّذِیۡنَ اٰوَوۡا وَّ نَصَرُوۡۤا اُولٰٓئِکَ ہُمُ الۡمُؤۡمِنُوۡنَ حَقًّا ؕ لَہُمۡ مَّغۡفِرَۃٌ وَّ رِزۡقٌ کَرِیۡمٌ ﴿۷۴﴾

۷۴۔ اور جو ایمان لائے اور (انہوں نے) ہجرت کی اور اللہ کی راہ میں جہاد کیا اور وہ جنہوں نے پناہ دی اور مدد دی، یہی سچے مومن ہیں،  اُن کے لیے حفاظت اور عزّت کا رزق ہے۔

وَ الَّذِیۡنَ اٰمَنُوۡا مِنۡۢ بَعۡدُ وَ ہَاجَرُوۡا وَ جٰہَدُوۡا مَعَکُمۡ فَاُولٰٓئِکَ مِنۡکُمۡ ؕ وَ اُولُوا الۡاَرۡحَامِ بَعۡضُہُمۡ اَوۡلٰی بِبَعۡضٍ فِیۡ کِتٰبِ اللّٰہِ ؕ اِنَّ اللّٰہَ بِکُلِّ شَیۡءٍ عَلِیۡمٌ ﴿٪۷۵﴾

۷۵۔ اور جو بعد میں ایمان لائے اور انہوں نے ہجرت کی اور تمہارے ساتھ مل کر جہاد کیا تو وہ تم میں سے ہی ہیں اور رشتہ کے تعلقات والے اللہ کے حکم میں آپس میں زیادہ حق دار ہیں،  اللہ ہر چیز کو جاننے والا ہے۔

Top